Hayatenau

Hayatenau Cancer awareness report published in Nawaiwaqt Newspaper

میگزین رپورٹ

ہمیں گذشتہ سال کے دن اچھی طرح یاد ہیں جب ہمارے والد کرنل امین الحق کینسر کے مرض کے لیے زیر علاج تھے۔ ہم میں سے کسی کو معلوم نہ تھا کہ اس کا انجام کیا ہوگا۔ بہرحال ہمیں ہر طرف سے منفی خبریں ملتی تھیں۔ اس سب کے باوجود ہمارے والد پُر اُمید تھے اور اپنے علاج میں ڈاکٹر سے باقاعدگی سے مشورہ ، دیگر جاننے والے ڈاکٹر سے بات چیت اور مرض کے بارے میں معلومات کا مطالعہ شامل تھا- انہوں نے اپنے علاج کے دوران ہی باقی مریضوں کو بھی حوصلہ دینا ، مرض کے بارے مےںمعلومات دینا اور ان کے لیے پانی اور ج±وس وغیرہ کی تقسیم کو ایک معمول بنالیا جو چلتے چلتے ایک ٹرسٹ تک جا پہنچا۔ پھر”حیات نو ویلفیئر ٹرسٹ ” کے نام سے ٹرسٹ کو باقاعدہ رجسٹرڈ کروایا گیا اور یوں کینسر کے مریضوں اور ان کے رشتہ داروں کو مرض سے آگاہی اور مالی امداد کاآغاز کیا- اس میں مختلف اداروں اور ہسپتالوں میں لیکچرز اور بات چیت شامل ہیں- اسی سلسلے میں 16 جون 2015 کو سی ایم ایچ انکالوجی ڈیپارٹمنٹ میں میجر جنرل افتخار احمد (انکالوجی ایڈوائزر) کی سرپرستی اور برگیڈیئر منذر زکریا (کنسلٹنٹ انکالوجی) کی رہنمائی میں ایک پروگرام کا انعقاد کیا گیاجس میں کینسر کے مریضوں، ان کے رشتہ داروں ،ان افراد نے جو کینسر کے مرض سے صحت یاب ہو چکے ہیں اور کچھ والینٹئرز نے شرکت کی ۔ ہر ایک نے اپنی اپنی روداد سنائی، دوسروں کی سنی اور بیماری سے متعلق مختلف خدشات کے حوالے سے بات چیت ہوئی۔ اس میں میجر قیصرہ سائکالوجسٹ کی بھی مدد شامل رہی۔اس سارے پروگرام کی سب اچھی بات یہ رہی کہ پروگرام کے شروع میں بہت سے مریضوں اور رشتہ داروں کے کےنسر کے مرض کے بارے میں جو خدشات تھے وہ پروگرام کے اختتام میں رفع ہو چکے تھے۔

اس پروگرام کے توسط سے درج ذیل پیغام دیے گئے :۔

1۔ کینسر قابل علاج ہے۔

2۔ کینسر کا مقابلہ حوصلے اور ہمت سے کریں۔

3۔ کسی بھی بیماری کا موت سے کوئی تعلق نہیں۔ وہ برحق اور اپنے مقررہ وقت پر ہے۔

Cancer Awareness Nawaiwaqt Report